May 19, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/gracelia.net/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
Hacking

گذشتہ کچھ عرصے سے سائبر کی دنیا میں ’گمنام سوڈان‘نامی ایک ہیکر گروپ نے پوری دنیا میں بڑے بڑے اداروں کی ویب سائٹس اور ان کے کمپیوٹر سسٹم کو ہیک کرکے دنیا کو حیران کردیا۔

جمعرات کوصبح کے وقت اسرائیل میں ایک اہم مواصلاتی نیٹ ورک میں خلل ڈالنے کی ذمہ داری قبول کرنے کے بعد ایک بار پھر عالمی سطح پر میڈیا کی توجہ کا مرکز ہے۔

اسرائیل کے اندر مذکورہ الیکٹرونک ہیکنگ گروپ کے لیے یہ پہلا موقع نہیں تھا کیونکہ یہ مشہور بینکوں اور یونیورسٹیوں کے ساتھ ساتھ اسرائیلی خفیہ ادارے’موساد‘ کی ویب سائٹس میں گھسنے میں کامیاب رہا۔

ان غیرمعمولی کارروائیوں نے ان سوالوں کے دروازے کھول دیے کہ “گمنام سوڈان” گروپ کون ہے اور وہ کیا چاہتا ہے؟!۔ خاص طور پر چونکہ اس گروپ کی جانب سے کی جانے والی ہیکنگ کی کارروائیاں صرف اسرائیل تک ہی محدود نہیں بلکہ اس نے بڑی تنظیموں اور ممالک کو بھی متاثر کیا ہے۔ کیونکہ “گمنام سوڈان” گروپ نے گذشتہ سال جنوری میں اپنے ظہورکے بعد سے درجنوں بین الاوقوامی اداروں کے آن لائن سروسز کو متاثر کیا ہے۔

فرانس، نائیجیریا، کینیا اور امریکہ میں متعدد سرکاری ویب سائٹس بھی گمنام سوڈان ہیکرز کا شکار ہوئیں۔

گائے فاکس ماسک!

سوڈان میں مواصلات اور ڈیجیٹل تبدیلی کے سابق وزیرہاشم حسب الرسول نے العربیہ ڈاٹ نیٹ اورالحدث ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ “سوڈانی ہیکرزسائبرسکیورٹی میں پیشہ ور افراد کا ایک گروپ ہیں۔ وہ کئی سائٹس پر سائبر حملے کرتے ہیں اور ان حملوں کا اعلانیہ مقصد بھی بتایا جاتا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے اس سوال کے جواب میں ا”گمنام سوڈان” کے نام سے مشہور ہونے والا گروپ سوڈانی ہے یا نہیں انہوں نے کہا کہ “اس بات سے انکار یا ثابت کرنا ممکن نہیں کہ وہ سوڈانی ہیں یا نہیں لیکن حقیقت ہے کہ سے سوڈان میں میرا عملی تجربہ یہ ہے کہ اس شعبے میں بہت سے سوڈانی انجینیر غیر معمولی صلاحیتوں کے مالک ہیں۔ ان میں اعلیٰ صلاحیتیں ہیں اور وہ بہت کچھ کر سکتے ہیں”۔

ہاشم نے کہا کہ سائبرسکیورٹی کا شعبہ اب سب سے اہم شعبوں میں سے ایک بن چکا ہے۔ ہمارے پاس سوڈان میں اس شعبے میں بے پناہ انسانی مہارت اور صلاحیتیں موجود ہیں۔ اگر ریاست انہیں مناسب ماحول فراہم کرے تو ان سے مثبت فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے۔

وہ سوڈانی ہیں!

دوسری جانب سوڈان میں انفارمیشن اور کمپیوٹرسسٹمزکے انجینیرالولید صدیق نے العربیہ ڈاٹ نیٹ اور الحدث ڈاٹ نیٹ کو گمنام سوڈان کے ہیکرز سوڈانی ہیں جنہوں نے سائبر قذاقی کے معاملے کو ظالم حکومتوں اورملکوں کے خلاف ایک ٹول کے طورپرلیا ہے۔ اس سے انکار نہیں ہوتا کہ کچھ لوگ اسے ایک طرح کی تسکین بخش خواہشات، مہم جوئی یا مشغلے کے طور پر دیکھتے ہیں۔ ان میں سے کچھ امریکہ کی توجہ مبذول کرنے کے لیے ایک ذریعہ کے طور پر استعمال کرتے ہیں۔

انہوں نے اپنے اس دعوے کی تصدیق کی کہ گروپ کے اراکین نے گذشتہ جون میں جشن منایا، جب امریکی سائبر سکیورٹی ایجنسی نے تنظیموں کے خلاف حملوں کی لہرکے بارے میں ایک سرکاری انتباہ جاری کیا۔ اس وارننگ میں کہا گیا کہ یہ گروپ وقت اور پیسہ اور ساکھ کو متاثر کر سکتا ہے، کیونکہ وسائل اور خدمات تک رسائی حاصل نہیں کی جا سکتی”!

انجینیر الولید نے وضاحت کی کہ سوڈانی گروپ نے اپنی مقبولیت اور حکومتوں اور ریاستوں پر اپنے اثر و رسوخ کی طاقت سے فائدہ اٹھانے کے لیے بین الاقوامی گروپ کے طور پر ایک ہی نام لیا ہے۔ “گمنام سوڈان” گروپ کے اراکین کی اکثریت “کمپیوٹر یا سافٹ ویئر سے متعلق سائنس کے کالجوں کے فارغ التحصیل ہیں۔ گروپ کے اراکین میں مختلف صلاحیتیں ہیں، لیکن تمام ہیکر گروپس کوآپریٹو گروپس کی نمائندگی کرتے ہیں۔

ہم روسی نہیں ہیں!

ٹیلی کام کے ماہر عمار حمودہ نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو وضاحت کی کہ “گمنام سوڈان” گروپ اپنی بہترین تعریفوں میں اخلاقی ہیکرز کا ایک گروپ ہے۔ ان کے عقیدے کے مطابق یہ گروپ اقدار کے ایک مخصوص سیٹ کی حمایت کرنا چاہتے ہیں۔

اس کی سب سے بری بات یہ ہے کہ یہ بڑی صلاحیتوں کے حامل فریقوں کا ایک جھوٹا گروہ ہے جو سوڈان کے گمنام انٹرفیس کو چھپاتا ہے یا اس سے فائدہ اٹھاتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہیکنگ اس کے اخلاقی اور غیر اخلاقی دونوں حصے دشمن کے طور پر درجہ بندی کرنے والی سائٹس پر سائبر حملوں میں ایک ہی طریقہ پر عمل کرتے ہیں۔

عمار نے اشارہ کیا کہ مذکورہ گروپ کو ڈیجیٹل شواہد میں مہارت رکھنے والے روسی گروپوں سے جوڑنے والے ایک تعلق، الزامات اور حالاتی ثبوت موجود ہیں۔

تاہم گروپ کے ایک رکن نے سائبرسکیورٹی کی دنیا میں مقبول ہونے والے ان الزامات کی سختی سے تردید کی کہ یہ ایک روسی الیکٹرانک ملٹری یونٹ ہے، جو کہ ایک غیر ملکی ہیکنگ گروپ کے بھیس میں کام کرتاہے۔

ایلون مسک کو چیلنج!

یہ بات قابل ذکرہے کہ اسرائیل میں صارفین کی طرف سے موصول ہونے والی رپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ جمعرات کی صبح سائبرحملے کی وجہ سے موبائل فون کے اہم نیٹ ورکس میں سے ایک خرابی متاثر ہوئی۔

الیکٹرانک ہیکنگ گروپ ’گمنام سوڈان‘نے اسرائیلی ٹیلی فون نیٹ ورک میں خلل ڈالنے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ یہ پہلا موقع نہیں کہ گذشتہ اپریل میں پریس رپورٹس میں بتایا گیا تھا کہ ہیکر گروپ “انانیمس سوڈان” نے اسرائیلی موساد کی ویب سائٹ ہیک کرنے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

ہیکرگروپ کی طاقت اس سطح پر پہنچ گئی کہ اس نے مشہور “ایکس” پلیٹ فارم کے مالک ایلون مسک کو چیلنج کر دیا۔ ہیکرگروپ “انانیمس سوڈان” نے گذشتہ ستمبر کے آغازمیں پلیٹ فارم کو کام کرنے سے روکنے میں کامیاب ہوگیا تھا۔

’ایکس‘ ویب سائٹ دو گھنٹے سے زائد وقت تک ڈاؤن رہی اور اس سائبر حملے سے ہزاروں صارفین متاثر ہوئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *